بسم اللہ الرحمن الرحیم

قومی

کسی ایک ملزم سے خصوصی سلوک نہیں ہوسکتا،شیخ رشید

عمران خان سعودی عرب میں اہم فیصلے کرنے گیا تھا، ان فیصلوں کے اثرات عید الفطر کے بعد نظر آئیں گے

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ فطرانے کے چاولوں کی باتیں کرنے والے شرم کریں، عمران خان سعودی عرب میں اہم فیصلے کرنے گیا تھا، ان فیصلوں کے اثرات عید الفطر کے بعد نظر آئیں گے۔انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کسی ایک ملزم سے خصوصی سلوک نہیں ہوسکتا، شہبازشریف کے حوالے سے عدالت کا جو فیصلہ آیا ہے وہ بلیک لسٹ سے متعلق ہے، جبکہ شہبازشریف بلیک لسٹ پر نہیں تھے، وہ 7مئی 2021 کے آرڈر پر تھے، پہلی چیز بلیک لسٹ ہے جو پاسپورٹ آفس ڈالتا ہے، دوسری چیز پی این آئی ایل جو کہ ایف آئی اے ڈالتا ہے، تیسری چیز ای سی ایل ہے، جس کا فیصلہ کابینہ کمیٹی نے کرنا ہوتا ہے اور فیصلہ وفاقی کابینہ کو بھیجنا ہوتا ہے۔

ذیلی کمیٹی نے شہبازشریف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی سفارش کردی ہے۔شہبازشریف خود نوازشریف کے ضمانتی ہیں،ہمارے پاس ان کی کوئی درخواست بھی نہیں آئی، اہم بات یہ ہے کہ شہبازشریف 15روز میں نظرثانی کی درخواست دے سکتے ہیں، وہ وزارت داخلہ میں خود بھی پیش ہوسکتے ہیں، درخواست کے بعد وزارت داخلہ 90 روز میں فیصلہ کرے گی۔ وزارت داخلہ کو ابھی تک کوئی میڈیکل گراؤنڈ نہیں بتائی گئی۔

وزیرداخلہ نے کہا کہ ٹی ایل پی کے سولہ ایم پی او کے تحت 1677لوگوں کو رہا کردیا گیا ہے، 280 جو ہیں جن کیخلاف ایف آئی آرز ہیں وہ قانونی عمل سے گزریں گے۔سولہ ایم پی او کے تحت 1074عدالت نے رہا کیے، 25 لوگوں کے کیسز ویسے ہی ختم کردیے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

Back to top button