بسم اللہ الرحمن الرحیم

بین الاقوامی

روانڈا کا نیا جنم، نسل کشی کے ماحول سے اتحاد کی علامت بن کر ابھرنے والی قوم

 کیگالی جینوسائیڈ میموریل میں 7 اپریل کو ایک تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں روانڈا کے صدر پال کاگامے اور خاتون اول جینیٹ کاگامے نے 3 دہائی قبل پیش آئے سانحے میں مرنے والوں خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے یادگاری مشعل روشن کی جو 100 دن تک روشن رہے گی۔
روانڈ کی تاریخ میں 7 اپریل 1994 میں تاریک ترین دن تھا جس دن ہوتو ملیشیا نے دہشت گردی کی ایک لہر کا آغازکیا جس کے نتیجے میں 3 ماہ کے دوران روانڈا کے تقریباً 10 لاکھ افراد ظلم و تشدد کا نشانہ بن گئے جن میں زیادہ تر توتسی متاثر ہوئے ۔ اس دوران متعدد خواتین اور بچوں سمیت توتسی شہریوں کے خلاف مار پیٹ ، تشدد ، عصمت دری اور قتل کے واقعات ہوئے۔
ایک ہی زبان اور مذہب رکھنے والے ہوتوس اور تتسیوں برادریوں کو توڑنے والی نسل کشی کی جڑیں مغربی طاقتوں کی نوآبادیاتی پالیسیوں میں پائی گئیں۔ تقسیم کے بیج نوآبادیاتی منصوبے “تقسیم کرو اور حکومت کرو” کے ذریعے بوئے گئے تھے۔
افریقہ کے وسط میں واقع روانڈا کو “ایک ہزار پہاڑیوکی سرزمین” بھی کہا جاتا ہے۔ اس کے دلفریب مناظر میں پرسکون جھیلیں اور سرسبز و شاداب ندیوں کے درمیان پہاڑیاں نظرآتی ہیں۔
ہوتو اور توتسی برادریاں عرصہ دراز سے غالب نسلی گروہوں کے طور پر ایک ساتھ رہ رہی ہیں۔ ہوتو، بنیادی طور پر زراعت سے وابستہ ہیں جبکہ توتسی ایک بڑی اقلیت ہے، جو روایتی طور پر مویشیوں کے کاروبار سے جڑے ہیں ۔ کئی نسلوں سے دونوں برادریوں کا آپس میں تعلق ہے جو مخلوط بستیوں میں رہتی ہیں اور اکثر آپس میں شادیاں کرتی رہتی ہیں۔
روانڈا کے ایک سیاسی تجزیہ کار جین بپٹسٹ گاسومیناری نے کہا ہے کہنوآبادیات کی آمد سے قبل روانڈا کے باشندے مکمل ہم آہنگی کے ساتھ رہتے تھے جہاں ہوتو، توتسی اور ٹوا ہرایک کا معاشرے میں اپنا ایک کردار تھا۔
روانڈا کی قسمت نے 19 ویں صدی کے آخر میں پہلے جرمنوں اور بعد میں بیلجیئم کے یورپی نوآبادیات کی آمد کےبعد ایک نیا موڑ لیا اور نسلی درجہ بندی کا استعمال کرتے ہوئے ، نوآبادیات نے دونوں نسلی گروہوں کے درمیان دیرینہ ہم آہنگی ختم کردی۔
مغربی ماہرین نے مقامی آبادی کی کھوپڑیوں، چہرے کی خصوصیات اور جسم کی اقسام کی چھان بین کی۔ معمولی فرق جیسے ناک کی لمبائی اور چوڑائی کو نسلی نشانات سمجھا جاتا تھا۔ 1933 سے بیلجیئم کے نوآبادیاتی حکام نے روانڈا کے باشندوں کو ان کے شناختی کارڈ پر “ہوتو” یا “توتسی” کے طور پر تقسیم کرنے والے شناخت کے طور پر لکھنا شروع کیا۔
قومی اسمبلی کے اس وقت کے نائب صدر لارینٹ نکونگولی توتسی ہیں انہوں نے امریکی مصنف فلپ گوریوچ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ آپ ہمیں الگ نہیں بتا سکتے، یہاں تک کہ ہم بھی ہمیں الگ نہیں بتا سکتے۔ ہوتو بستی میں ان کے ساتھ “ان میں سے ایک” جیسا سلوک کیا گیا۔
ایک مستحکم سیاسی منظر نامے، مضبوط سلامتی اور شفاف حکمرانی کے عزم سے روانڈا نے حالیہ برسوں میں قابل ذکر اقتصادی اور سماجی ترقی کی ہے۔
عالمی بینک کے مطابق روانڈا کی معیشت نے 2009 اور 2019 کے درمیان اوسط سالانہ شرح 7.2 فیصد اور فی کس جی ڈی پی میں 5 فیصد اضافے کے ساتھ نمایاں ترقی تھی۔ کیگالی نے 2008 میں یو این ہیبی ٹیٹ اسکرول آف آنر ایوارڈ حاصل کیا۔ یہ انعام حاصل کرنے والا پہلا افریقی شہر تھا۔
روانڈا نے 2018 میں چین کے مجوزہ بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو میں شمولیت اختیار کی۔ اعداد و شمار کے مطابق چینی کاروباری اداروں کی تعمیر کردہ شاہراہیں ملک کی مجموعی شاہراہوں کا 70 فیصد سے زیادہ ہے۔ یہ روانڈا کی معاشی اور سماجی ترقی میں شریان کا کام کررہی ہیں زمین سے گھرے ملک کو باہمی طور پر اور ہمسایہ ممالک سے جوڑتی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ وہ چین کے روانڈ سمیت افریقہ کے ساتھ تعلقات میں تعاون کو سراہتےہیں چین کا شروع کردہ چین۔ افریقہ تعاون فورم نوآبادیات کا ذریعہ نہیں بلکہ لوگوں کے درمیان تعاون کے فروغ کا ایک پلیٹ فارم ہے۔ چینی ترقیاتی ماڈل قوم کو غربت سے خوشحالی کی سمت منتقل کرتا دوسرے ترقی پذیر ممالک کے لئے ترغیب کا کام کرتا ہے۔
گزشتہ برس ستمبر میں اقوام متحدہ کے جنوب ۔ جنوب تعاون کے دن کی مناسبت سے منعقدہ تقریب میں روانڈا کی وزارت خارجہ اور بین الاقوامی تعاون میں مشرقی افریقی برادری کے انچارج وزیر مملکت مناسیہ نیشوتی نے جنوب۔ جنوب تعاون کی اہمیت پر زور دیا۔
انہوں نے کہا کہ وہ سب پر زور دیتے ہیں کہ وہ توقف کریں اور جنوب۔ جنوب تعاون کے وسیع امکانات پر غور کریں۔ یہ خیالات کے تبادلے یا معاہدوں پر دستخط تک محدود نہیں ہے۔ یہ یکجہتی کے پائیدار بندھن قائم کرنے سے متعلق ہے جو ہماری قوموں کو ترقی دے گا اور ہمارے اجتماعی مستقبل کو تبدیل کرے گا۔

مزید پڑھیے  نائب افغان وزیراعظم ملاعبدالغنی برادر منظر عام پر آگئے
Back to top button