بسم اللہ الرحمن الرحیم

قومی

غریب اور متوسط طبقے کے لیے ساڑھے 7 ارب روپے کی سبسڈی پر مبنی ریلیف پیکیج کی منظوری

وزیراعظم شہباز شریف نے رمضان المبارک میں غریب اور متوسط طبقے کے لیے ساڑھے 7 ارب روپے کی سبسڈی پر مبنی ریلیف پیکیج کی منظوری دے دی۔وزیراعظم آفس کے میڈیا ونگ سے جاری پریس ریلیز کے مطابق وزیرِ اعظم شہباز شریف کی زیرِ صدارت رمضان المبارک میں وزیرِ اعظم رمضان ریلیف پیکیج اور بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے حوالے سے اعلیٰ سطح کا اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں سینیٹر اسحٰق ڈار، احد خان چیمہ، شیزہ فاطمہ خواجہ، رومینہ خورشید عالم اور متعلقہ اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔اجلاس کو وزیر اعظم رمضان ریلیف پیکیج کے حوالے سے تفصیلی طور پر آگاہ کیا گیا، وزیراعظم کو بتایا گیا کہ اس پیکیج کے تحت رمضان المبارک میں ملک بھر میں 3 کروڑ 96 لاکھ سے زائد خاندانوں کو اشیا خورد و نوش سستے داموں فراہم کی جارہی ہیں۔بریفنگ میں بتایا گیا کہ بینظیر انکم سپورٹ پوروگرام کے تحت اہل 88 فیصد خاندانوں کو آٹا، چاول، دالیں، گھی، خوردنی تیل، چینی، دودھ سمیت 19 اشیائے خورونوش بازار سے با رعایت فراہم کی جارہی ہیں۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ ملک بھر میں ساڑھے سات ارب روپے کے وزیراعظم رمضان ریلیف پیکیج کی تقسیم شروع کر دی گئی جو چاند رات تک جاری رہے گی۔اجلاس میں بتایا گیا کہ آٹے کے 20 کلو تھیلے پر 77 روپے فی کلو اور گھی پر 70 روپے فی کلو سبسڈی دی جارہی ہے، وزیرِ اعظم کا رمضان ریلیف پیکیج ملک بھر میں قائم 4 ہزار 775 یوٹیلیٹی اسٹور کے ذریعے مستحق خاندانوں میں تقسیم کیا جارہا ہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ وزیرِ اعظم کی ہدایت پر رواں سال رمضان المبارک میں غریب و متوسط طبقے کو 7.5 ارب روپے کا رمضان ریلیف پیکیج فراہم کیا جا رہا ہے جس میں آٹے، دالیں، گھی، خوردنی تیل، چینی، مشروبات سمیت 19 اشیاء خورونوش کو بازار سے کم قیمت پر فراہم کیا جا رہا ہے۔

مزید پڑھیے  آئل کمپنیوں نے منصوعی بحران سے پیسہ بنایا،حکومت ریکوری کرے،لاہور ہائیکورٹ

اجلاس کو بتایا گیا کہ اس رمضان المبارک میں وزیرِ اعظم رمضان پیکیج میں دی جانے والی سبسڈی کی شرح 30 فیصد ہے جو ملک میں مہنگائی کی شرح سے بھی زیادہ ہے۔بریفنگ میں یہ بھی بتایا گیا کہ پیکج سے مستفید ہونے والوں میں ملک کے غریب اور کم آمدن متوسط طبقے کے تقریباً تمام افراد شامل ہیں، مزید یہ کہ وزیرِ اعظم رمضان ریلیف پیکیج کے حصول کے لیے آئے ایسے افراد جن کو رجسٹریشن کے مسائل درپیش ہوں گے، موجودہ نظام کے تحت ان کی موقع پر ہی رجسٹریشن کی سہولت موجود ہے۔بریفنگ میں بتایا گیا کہ اس کے علاوہ شکایات کے ازالے کے لیے بھی مربوط و مؤثر نظام قائم کیا گیا ہے جو کہ موقع پر ہی مستحقین کی شکایات فوری حل کر رہا ہے۔

وزیرِ اعظم کو بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے حوالے سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا گیا کہ وزیرِاعظم شہباز شریف کی خصوصی کوششوں و توجہ سے بینظیر انکم سپورٹ کے تحت رجسٹرڈ غریب و مستحق خاندانوں کی سہ ماہی امدادی رقم میں خاطر خواہ اضافہ کرکے 10 ہزار 5 سو کر دیا گیا ہے۔اس موقع پر وزیراعظم نے ہدایت کی کہ رمضان پیکیج میں تقسیم کی جانے والی اشیا کے معیار کی کڑی نگرانی کی جائے۔انہوں نے ہدایت کی کہ رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں دیگر اشیا ضروریہ کی قیمتوں میں مصنوعی اضافہ کرنے والوں اور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف سخت کارروائی یقینی بنائی جائے۔

شہباز شریف نے کہا کہ رمضان میں ہی بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تحت 10 ہزار 500 روپے کی سہ ماہی قسط مستحق افراد میں تقسیم کی جائے، بلوچستان میں مستحقین کو 2 ہزار روپے اضافی دیے جائیں۔اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ رمضان المبارک میں غریب و متوسط خاندانوں کو اشیاءِ خورونوش کی بازار سے کم قیمت پر فراہمی حکومت کی اولین ترجیح ہے ۔

مزید پڑھیے  نور مقدم قتل کیس،ملزم ظاہر جعفر نے اعترافی بیان دے دیا

انہوں نے کہا کہ رمضان ریلیف پیکیج میں فراہم کی جانے والی اشیا خورونوش کے معیار پر کسی قسم کا سمجھوتہ قبول نہیں، یقینی بنایا جائے کہ رمضان پیکیج کے حصول کیلئے آنے والے مستحق افراد کو کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ ہو۔ان کا کہنا تھا کہ رمضان پیکیج بالخصوص سستے آٹے کی تقسیم کے لیے کاؤنٹرز میں اضافہ اور موبائل یونٹس کا قیام عمل میں لایا جائے، رمضان ریلیف پیکیج کے حوالے سے غریب و متوسط طبقے کے لوگوں تک اس کی مکمل رہنمائی پہنچائی جائے تاکہ انہیں پیکیج کے تحت اشیاء کے بروقت حصول میں کسی قسم کی دقت کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پیکیج کے حصول کے لیے آئے افراد کی شکایات کے فوری ازالے کے لیے نظام کو مزید مربوط و مؤثر بنایا جائے، رمضان ریلیف پیکیج کے حوالے سے کسی بھی قسم کی غفلت و سست روی برداشت نہیں کی جائے گی۔

شہباز شریف نے کہا کہ حکومت رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں مہنگائی سے پریشان غریب و متوسط طبقے کے لوگوں کو اکیلا نہیں چھوڑے گی۔وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ رمضان المبارک میں ہی ان رقوم کی فوری تقسیم مستحق افراد میں یقینی بنائی جائے۔ وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ بلوچستان کے ایسے مستحق خاندان جو بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تحت رجسٹرڈ ہیں انہیں 10 ہزار 500 کی سہ ماہی امدادی رقم کے ساتھ ساتھ اضافی 2 ہزار روپے تقسیم کئے جائیں۔

وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ رمضان ریلیف پیکیج کی تقسیم کے حوالے سے ملک گیر آگاہی مہم چلائی جائے تاکہ مستحق افراد کو نہ صرف اس حوالے سے معلومات میسر ہو بلکہ یہ پیکیج زیادہ سے ذیادہ اہل مستحق افراد تک پہنچ سکے۔

مزید پڑھیے  جنوبی ایشیا میں امن اور ترقی مسئلہ کشمیر کے حل سے جڑی ہے، وزیراعظم شہباز شریف
Back to top button