بسم اللہ الرحمن الرحیم

تجارت

نیپرا کی بجلی کمپنیوں کی سالانہ لائسنسنگ فیسوں میں 125 فیصد اضافے کی تجویز

 کے الیکٹرک کی سالانہ ٹرانسمیشن لائسنس فیس 70 لاکھ روپے سے بڑھا کر ڈیڑھ کروڑروپے کرنے کی بھی تجویز دی گئی

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا)نے بجلی کمپنیوں کی سالانہ لائسنسنگ فیسوں میں بھاری اضافے کی تجویز دے دی۔

نیپرا نے بجلی پیداواری کمپنیوں کی سالانہ فیس میں 125 فیصد اضافے کی تجویز دیتے ہوئے اس حوالے سے حتمی فیصلے سے قبل اسٹیک ہولڈرز سے 30یوم میں آرا ء طلب کرلی ہے۔ بجلی پیداواری کمپنیوں کے لیے فیس 20 ہزار سے بڑھا کر 44ہزار 786روپے فی میگاواٹ کرنے تجویز کی گئی ہے۔

نیشنل گرڈ کمپنی کی سالانہ فیس 115فیصد اضافے سے 2کروڑ 15لاکھ روپے تجویز کی گئی ہے جبکہ صوبائی گرڈ کمپنی کی سالانہ فیس 115فیصد اضافے سے 53لاکھ 70ہزار روپے تجویز کی گئی ہے۔

نیپرا تجاویز میں کے الیکٹرک کی سالانہ ٹرانسمیشن لائسنس فیس 70لاکھ روپے سے بڑھا کر ڈیڑھ کروڑروپے کرنے کی بھی تجویز دی گئی ہے۔ ریگولیٹری اتھارٹی نے بجلی کی تقسیم کے لائسنس کی سالانہ فیس13ہزار 973روپے فی ایم وی اے کرنے  اور مارکیٹ اینڈ سسٹم آپریشنز فیس 115فیصد اضافے سے 2کروڑ 15 لاکھ روپے سالانہ کرنے کی تجویز دی ہے۔

خصوصی مقاصد کے لیے بجلی کی ترسیلی لائن کی فیس 2ہزار 500سے بڑھا کر 5ہزار 375روپیفی میگاواٹ کرنے جب کہ خصوصی مقاصدکی ٹرانسمیشن لائن کی زیادہ سے زیادہ سالانہ فیس ایک کروڑ سے بڑھا 2کروڑ 15لاکھ روپے کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

علاوہ ازیں ملک میں بجلی کی مسابقتی تجارت کے تحت ایک کروڑ 94لاکھ روپے سالانہ فیس کی بھی تجویز دی گئی ہے۔

مزید پڑھیے  ایل پی جی کی قیمت میں 5 روپے فی کلو کا اضافہ
Back to top button